378

شمالی وزیرستان دھماکے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کرلی

اسلام آباد (ڈیلی اردو) تحریک طالبان پاکستان نے شمالی وزیرستان میں بارودی سرنگ دھماکے کی ذمہ داری قبول کرلی ہے، دھماکے میں پاک فوج کے تین افسران سمیت 4 جوان شہید، جبکہ 4 سیکیورٹی اہلکار شدید زخمی ہوگئے تھے، دھماکے میں پاک فوج کی گاڑی کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع شمالی وزیرستان کے علاقے خڑ قمر چیک پوسٹ کے قریب گزشتہ روز بارودی سرنگ کا دھماکا ہوا تھا۔ دھماکے کے نتیجے میں پاک فوج کے تین افسران سمیت 4 جوان شہید جبکہ 4 سیکیورٹی اہلکار زخمی ہوئے۔ شمالی وزیرستان دھماکے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کر لی ہے۔ ٹی ٹی پی ترجمان نے اپنے بیان میں بتایا کہ کالعدم تنظم ٹی ٹی پی شمالی وزیرستان میں پاک فوج پر حملے کی ذمہ داری قبول کرتی ہے۔

گزشتہ روز دھماکے میں لیفٹنینٹ کرنل رشید کریم بیگ، میجر معیز مسعود، کیپٹن عارف اللہ مروت اور نائب حوالدار ظہیر احمد شہید ہو گئے تھے جبکہ سپاہی عارف، سپاہی اسلم، سپاہی امجد، اور سپاہی شوکت شدید زخمی ہیں جنہیں ملٹری ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ دھماکے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقہ میں کرفیو لگا دی اور سرچ آپریشن شروع کر دی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق شہید لیفٹیننٹ کرنل راشد کریم بیگ کا تعلق ہنزہ کے علاقے کریم آباد سے تھا۔ شہید میجر معیز مقصود بیگ کا تعلق کراچی سے، کیپٹن عارف اللہ کا تعلق لکی مروت اور لانس حوالدار ظہیر کا تعلق چکوال سے تھا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق اسی مقام پر فورسز نے سرچ آپریشن کر کے دہشت گردوں کے چند سہولت کاروں کو گرفتار کیا تھا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق گزشتہ ایک ماہ کے دوران شمالی وزیرستان میں 10 سیکیورٹی اہلکار شہید اور 35 زخمی ہو چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں