98

کرکٹ ورلڈکپ 2019: ‏انگلینڈ آسٹریلیا کو شکست دے کر ورلڈکپ کے فائنل میں پہنچ گیا

برمنگھم (ویب ڈیسک) کرکٹ ورلڈکپ 2019 کے دوسرے سیمی فائنل میں میزبان انگلینڈ نے دفاعی چیمپئن آسٹریلیا کو باآسانی 8 وکٹوں سے شکست دے کر فائنل میں جگہ بنالی۔

آسٹریلیا نے انگلینڈ کو جیت کے لیے 224 رنز کا ہد ف دیا جو اس نے 32.1 اوورز میں 2 وکٹوں کے نقصان پر پورا کرلیا۔

انگلینڈ کا مقابلہ فائنل میں 14 جولائی کو نیوزی لینڈ سے ہوگا، دونوں ہی ٹیمیں اب تک کوئی ورلڈکپ نہیں جیت سکی ہیں اور اس بار دنیائے کرکٹ کو نیا ورلڈ چیمپئن ملے گا۔

مینز ورلڈکپ کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے کہ آسٹریلیا کو سیمی فائنل میچ میں شکست ہوئی ہے۔

1992 کے بعد انگلینڈ نے پہلی بار فائنل میں جگہ بنائی ہے، 1992 میں انگلینڈ کو پاکستان سے شکست ہوئی تھی۔

آسٹریلیا کی اننگز

برمنگھم کے ایجبیسٹن گراؤنڈ میں کھیلے گئے میچ میں آسٹریلوی کپتان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

اننگز کے آغاز پر قسمت نے آسٹریلیا کا ساتھ نہ دیا اور اس کی پہلی وکٹ 4 کے مجموعے پر گری اور فنچ بغیر کوئی رن بنائے آرچر کی گیند پر پویلین لوٹ گئے، ان کے بعد وارنر 9 کے مجموعے پر کرس ووکس کی گیند پر سلپ پر کیچ آؤٹ ہوگئے۔

پیٹر ہینڈسکومب بھی پچ پر ٹک نہ سکے اور 4 رنز بنا کر کرس ووکس کی گیند پر پویلین کا رُخ کرلیا۔

چوتھی وکٹ پر ایلکس کیری اور اسٹیو اسمیتھ نے ٹیم کو سہارا دیا اور اسکور کو آگے بڑھایا لیکن 117 کے مجموعے پر کیری 46 رنز بناکر پویلین لوٹ گئے جن کےبعد آنے والے اسٹوئنس بغیر کوئی رن بنائے عادل رشید کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوگئے۔

جب ٹیم کا مجموعی اسکور 157 تک پہنچا تو گلین میکسویل بھی 22 رنز بنا کر آرچر کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوگئے جس کے بعد اسٹیون اسمیتھ نے ذمہ درانہ بیٹنگ کی لیکن وہ بھی 217 کے مجموعی اسکور پر ٹیم کا ساتھ چھوڑ گئے، اسمتھ نے 85 رنز کی شاندار اننگز کھیلی اور بٹلر کے ہاتھوں رن آؤٹ ہو گئے۔

آخری اوورز میں مچل اسٹارک کے 29 رنز کی بدولت پوری آسٹریلوی ٹیم49 اوور میں 223 رنز پر آؤٹ ہو گئی۔

انگلینڈ کی جانب سے کرس ووکس اور عادل رشید نے 3،3 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ آرچر نے 2اور مارک ووڈ نے 1 وکٹ حاصل کی۔

انگلینڈ کی اننگز

جیسن رائے اور بیئراسٹو نے انگلینڈ کو 124 رنز کی اوپننگ پارٹنرشپ فراہم کی اور آسٹریلیا کو ٹائٹل کی دوڑ سے دور کردیا— فوٹو: آئی سی سی

جواب میں انگلینڈ کی جانب سے اننگز کا آغاز جیسن رائے اور جونی بیئراسٹو نے کیا۔ دونوں نے شروع ہی سے پراعتماد انداز سے بیٹنگ کی۔

جیسن رائے جارحانہ موڈ میں نظر آئے اور تیزی سے رنز بنائے۔ جیسن رائے اور بیئراسٹو نے انگلینڈ کو 124 رنز کی اوپننگ پارٹنرشپ فراہم کی اور آسٹریلیا کو ٹائٹل کی دوڑ سے دور کردیا۔

انگلینڈ کی پہلی وکٹ 124 کے مجموعی اسکور پر گری جب جونی بیئراسٹو 34 رنز بناکر مچل اسٹارک کا شکار بن گئے۔

اس کے بعد 147 کے مجموعی اسکور پر جیسن رائے امپائر کمار دھرماسینا کے غلط فیصلے کا شکار بن گئے۔ اس موقع پر جیسن رائے اور امپائر کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی تاہم ریویو نہ ہونے کی وجہ سے انہیں واپس جانا پڑا۔ وہ 65 گیندوں پر 85 رنز بناکر پویلین لوٹے۔

اس کے بعد کپتان اوئن مورگن کریز پر آئے جنہوں نے جو روٹ کے ساتھ مل کر ٹیم کو فتح سے ہمکنار کرادیا۔

اوئن مورگن 45 اور جو روٹ 49 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے۔ آسٹریلیا کی جانب سے مچل اسٹارک اور پیٹ کمنز نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔کرس ووکس کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

یاد رہے گزشتہ روز مانچسٹر میں پہلا سیمی فائنل کھیلا گیا جس میں نیوزی لینڈ نے بھارت کو شرمناک شکست دے کر فائنل میں اپنی جگہ بنائی، انگلینڈ اور نیوزی لینڈ 14 جولائی اتوار کو لارڈز میں فائنل میچ کھیلیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں