532

تمام علماء قائد اعظم کو کافر کہتے تھے، وفاقی وزیر فواد چوہدری نے ایسی بات کہہ دی کہ سن کر آپ کا منہ کھلے کا کھلا رہ جائے، انتہائی حیران کن خبر آگئی

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ ملک کو کیسے چلانا ہے اس کا فیصلہ مولانا فضل الرحمان پر نہیں چھوڑا جا سکتا۔ وفاقی وزیر فواد چوہدری نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ اگر ملک چلانے کا فیصلہ مولانا نے کرنا ہے تو اس رو سے تو پاکستان کا قیام ہی غلط تھا کیونکہ تمام بڑے علماء تو پاکستان کے قیام کے خلاف تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ علماء پاکستان بنانے والے قائد اعظم محمد علی جناحؒ کو کافرِ اعظم کہتے تھے اور اب یہ چاہتے ہیں کہ ان کے بنائے ملک کا نظام انہیں سونپ دیا جائے۔

وفاقی وزیرسائنس و ٹیکنالوجی نے واضح کیا کہ آگے کا سفر اب مولویوں نے نہیں بلکہ نوجوانوں نے کرنا ہے اور ٹیکنالوجی ہی ملک کو آگے لے جا سکتی ہے۔ یہ فیصلہ کہ ملک کیسے چلنا ہے مولانا پر نہیں چھوڑا جا سکتا، اس رو سے پاکستان کا قیام ہی عمل میں نہ آتا کیونکہ تمام بڑے علماء تو پاکستان کے قیام کے مخالف تھے اور جناح صاحب کو کافر آعظم کہتے تھے، آگے کا سفر مولویوں نے نہیں نوجوانوں نے کرنا ہے اور ٹیکنالوجی ہی قوم کو آگے لیجا سکتی ہے۔

یاد رہے کہ جمیعتِ علماءِ اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا تھا کہ اب ملک میں انتخابات کروا دیے جانے چاہیں کینکہ یہ حکومت ناکام ہو چکی ہے اور اب مزید یہ حکومت ملک کو چلا نہین سکتی جس پر اب فواد چوہدری نے تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کو کیسے چلانا ہے اس کا فیصلہ مولانا فضل الرحمان پر نہیں چھوڑا جا سکتا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں