شام: فورسز اور جنگجوؤں میں جھڑپیں، 10 شہریوں سمیت 35 اہلکار جاں بحق

دمشق (نیوز ڈیسک) شام کے شہر کے ادلیب اور شمالی مغربی علاقوں میں امریکی جنگی طیاروں کے فضائی حملے اور تازہ جھڑپوں میں تقریباً 10 شہریوں سمیت شامی فوج کے 35 اہلکار جاں بحق ہوگئے۔

شام میں موجود برطانوی مبصر گروپ کے مطابق روسی حمایت شامی فورسز نے باغیوں جنگجوؤں کے زیر تسلط دو گاؤں جیبین اور تال مہل پر قبضہ حاصل کرنے کی کوشش کی۔

ان کے مطابق روسی حمایت شامی فورسز نے اتحادی جنگجوؤں کے ساتھ مل کر صوبہ حنہ کے دونوں گاؤں پر قبضہ حاصل کرنے کے لیے 5 مرتبہ کوشش کی گئی۔

برطانوی مبصر گروپ کے مطابق بارودی سرنگ کی زد میں آکر 8 جبکہ فضائی حملے میں 26 شامی فورسز کے اہلکار جاں بحق ہوئے۔

دوسری جانب ادلیب کے پڑوس میں امریکی فضائی حملے میں 3 بچوں سمیت 10 شہری جاں بحق ہوگئے۔

مبصر گروپ نے بتایا کہ البصرا اور میرات النعمان پر فضائی حملے کیے گئے۔

یاد رہے کہ امریکی صدر نے دسمبر 2018 میں شام سے فوجی انخلا کا اعلان کیا تھا۔

واضح رہے کہ داعش نے 2014 کے موسم سرما میں عراق کے شمال مغرب میں دوسرے بڑے شہر موصل کا قبضہ حاصل کرنے کے بعد دارالحکومت بغداد کی جانب پیش قدمی کی تھی۔

بعد ازاں امریکا نے فضائی کارروائی کے ذریعے عراق کی سرحدوں پر قبضہ کرنے والے دہشت گردوں کے خلاف مسلح مہم شروع کردی تھی اور طویل جدوجہد کے بعد فوج نے نومبر 2017 میں موصل کا قبضہ دوبارہ حاصل کرلیا تھا۔

واضح رہے کہ شام میں امریکا کی سربراہی میں ڈیموکریٹک فورسز نے گزشتہ برس اکتوبر میں الرقہ پر قبضہ حاصل کرلیا تھا۔

امریکا اور روس دونوں نے اپنی اپنی اتحادی فورسز کے ساتھ خصوصی تعاون کیا تھا اور فضائی کارروائیاں کی تھیں۔

روس کی جانب سے شام میں صدر بشارالاسد کی زیرسرپرستی حکومتی فورسز کی پشت پناہی کی جارہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں