شمالی وزیرستان میں دھماکا، جنوبی وزیرستان میں اے این پی کے امیدوار پر فائرنگ

میران شاہ + وانا (ڈیلی اردو/ نیوز ایجنسی) خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان میں اے این پی کے امیدوار تاج وزیر کی گاڑی پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کی جبکہ شمالی وزیرستان کے علاقے ھمزونی علی خیل گاؤں میں بم ڈسپوزل پارٹی پر ریموٹ کنٹرول بم سے حملہ ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جنوبی وزیرستان میں اے این پی کے امیدوار تاج وزیر کی گاڑی پر فائرنگ گزشتہ شب کیڈٹ کالج وانا کے قریب کی گئی۔ ذرائع کے مطابق موٹر سائیکل سواروں کی فائرنگ سے گاڑی پر گولیاں لگیں۔ تاج وزیر نے میڈیا سے بات چیت کے دوران کہا کہ نامعلوم موٹر سائیکل سوار میری گاڑی کا پیچھا کررہے تھے اور گاڑی نہ روکنے پر انہوں نے فائرنگ شروع کر دی۔

تاج وزیر نے مزید کہا کہ قبائلی اضلاع میں انتخابات کے لئے انتظامیہ اور دیگر ادارے مخصوص امیدواروں کو سیکیورٹی فراہم کررہے ہیں اورہمارے پاس اسلحہ تک نہیں چھوڑتے، نہتے چھوڑ دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ قبائلی اضلاع میں خیبرپختونخوا اسمبلی کی 16 نشستوں پرانتخابات کل یعنی 20 جولائی کو ہونے جارہے ہیں۔ قبائلی اضلاع میں صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے ایک ہزار 897 پولنگ اسٹیشنز قائم کیے گئے ہیں، جن میں سے 554 کو انتہائی حساس اور461 کو حساس قرار دیا گیا ہے۔ شمالی وزیرستان اور جنوبی وزیرستان کے تمام پولنگ اسٹیشنز کو حساس ترین اور حساس قراردیا گیا ہے۔ حساس ترین پولنگ اسٹیشنز میں فوج کے جوان تعینات کیے جائیں گے۔

دوسری جانب ضلع شمالی وزیرستان کے علاقے ھمزونی علی خیل گاوں میں بم ڈسپوزل پارٹی پر ریموٹ کنٹرول بم سے حملہ ہوا ہے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق بم حملے سے کوئی جانی و مالی نقصان نہیں ھوا۔ بم حملے کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں