183

کشمیر صورتحال: پاکستان نے سمجھوتہ اور تھر ایکسپریس کے بعد دوستی بس سروس بھی معطل کردی

اسلام آباد (ڈیلی اردو) پاکستان نے سمجھوتہ ایکسپریس اور تھر ایکسپریس کے بعد دوستی بس سروس بھی معطل کردی۔

وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید کا اپنی ٹوئٹ میں کہنا تھا کہ پاک بھارت بس سروس معطل کردی گئی ہے اور یہ فیصلہ قومی سلامتی کمیٹی کے فیصلوں کی روشنی میں کیا گیا۔ 

دوسری جانب ترجمان دوستی بس سروس کے مطابق دوستی بس اور امرتسر بس سروس پیر سے بند کی جائے گی۔ ترجمان نے بتایا کہ دونوں بسیں کل معمول کے مطابق چلیں گی۔

دوستی بس لاہور سے نئی دہلی جبکہ امرتسر بس لاہور سے بھارتی پنجاب کے شہر امرتسر تک جاتی ہے۔

یاد رہے کہ وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے گزشتہ روز لاہور سے چلنے والی  سمجھوتا ایکسپریس کو بند کرنے کا اعلان کیا تھا۔

آج وفاقی وزیر ریلوے نے کھوکھرا پار اور مونا باؤ کے درمیان چلنے والی تھر ایکسپریس بھی بند کرنے کا اعلان کیا۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ سمجھوتا ایکسپریس ہم نے کل وزیراعظم کی اجازت سے بند کی، کھوکھرا پار اور مونا باؤ کےدرمیان تھر ایکسپریس بھی بند کررہے ہیں جو آج رات 12 بجے تک بند کردی جائے گی۔

شیخ رشید نے کہا کہ کشمیریوں کے ساتھ ظلم ہوا، عالمی قوانین کی دھجیاں اڑائی گئیں، جو کشمیریوں کے ساتھ کھڑا نہیں ہوگا وہ غدار ابن غدار ہے، راولپنڈی کی لال حویلی کا سری نگر کے لال چوک سےخون کا رشتہ ہے۔

ادھر وزارت تجارت کا کہنا ہے کہ اس وقت دوطرفہ تجارت بھارت کے حق میں ہے۔ پاکستان اور بھارت کی سالانہ دو طرفہ تجارت کا حجم 2 ارب 12 کروڑ 40 لاکھ ڈالر جبکہ پاکستان کی درآمدات کا حجم 1 ارب 80 کروڑ ڈالر ہے۔ پاکستان کی بھارت کیلئے برآمدات کا حجم 32 کروڑ 40 لاکھ ڈالر ہے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل قومی سلامتی کمیٹی نے بھارت کے ساتھ دوطرفہ تجارت معطل کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں