افغانستان: کابل میں ہزارہ برادری کی شادی کی تقریب میں خودکش دھماکا، 63 افراد شہید، 182 زخمی

کابل (نمائندہ ڈیلی اردو) افغانستان کے دارالحکومت کابل میں شادی کی ایک تقریب کے دوران خودکش دھماکے کے نتیجے میں 63 افراد شہید اور 200 کے قریب زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق افغان حکام کا کہنا ہے کہ خودکش بمبار نے کابل میں واقع دبئی ہوٹل میں ہزارہ برادری کی ایک شادی کی تقریب کے دوران خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ جس کے نتیجے میں خواتین اور بچوں سمیت 63 سے زائد افراد شہید اور 182 سے زائد افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

افغان پولیس کے مطابق خودکش بم دھماکا کابل میں واقع شارع دبئی ہال کے اندر ہوا۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ خودکش بمبار نے شیعہ ہزارہ برادری کو ٹارگٹ کیا۔

افغان میڈیا کے مطابق شہدا میں سے 15 افراد کا تعلق ایک ہی خاندان سے بتایا جاتا ہے۔

واقعہ کے بعد امدادی ٹیموں نے زخمیوں کو فوراً ہسپتال منتقل کیا جہاں شہادتوں میں مزید اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔

افغان وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت رحیمی نے خودکش بم دھماکے کی تصدیق کی اور بتایا کہ حادثہ گزشتہ شب 10 بج کر 40 منٹ پر ہوا۔

افغان حکام کے مطابق خودکش دھماکے کے وقت شادی ہال لوگوں سے بھرا ہوا تھا، اطلاعات کے مطابق شادی کی تقریب میں تقریباً 1000 سے زائد افراد شریک تھے۔

ہسپتال ذرائع کا کہنا تھا کہ ابھی تک 150 سے لوگوں کو لایا گیا، جس میں سے متعدد افراد کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ شہدا کی 63 لاشیں ہسپتال میں موجود ہیں۔ مزید زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے۔

دھماکے کی ذمہ داری کسی گروپ یا تنظیم نے قبول نہیں کی ہے۔

افغان طالبان نے حملے ملوث ہونے کی تردید کی ہے لیکن اتوار کے روز ٹوئٹر پر اپنے ایک بیان میں افغان صدر اشرف غنی نے اس تازہ حملے کی سخت مذمت کی اور کہا کہ طالبان خود کو االزامات سے بری الذمہ قرار نہیں دے سکتے کیونکہ وہ دہشتگروں کو پلیٹ فارم مہیا کرتے رہے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں