افغانستان: طالبان کا کابل میں خودکش کار بم دھماکا، 10 افراد شہید، 105 زخمی

کابل (نمائندہ ڈیلی اردو) افغان دارالحکومت کابل میں خودکش کار بم دھماکے میں ابتک دس افراد شہید اور 105 سے زائد افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سوموار کی شب تقریبا 9:55 منٹ پر کابل شہر کے مشرقی حصے میں غیر ملکی سفارت خانوں اور سرکاری دفاتر کے نزدیک واقع گرین ولیج کے علاقے میں زور دار دھماکا ہوا۔

افغان میڈیا کے مطابق ابتک دس افراد شہید اور 105 سے زائد افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ زخمیوں کو فوری طورپر شہر کے مختلف ہسپتالوں میں منتقل کیا جا رہا ہے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق شہادتوں میں اضافہ کا خدشہ ہے۔

نیوز ایجنسی کے مطابق دھماکا اتنا شدید تھا کہ قریبی مکانوں اور عمارتوں کی کھڑکیوں اور دروازوں کے شیشے ٹوٹ گئے۔

اس علاقے میں پہلے بھی متعدد خودکش بم دھماکے ہوچکے ہیں۔

دھماکے کے بعد علاقے میں فائرنگ کی آوازیں بھی سنی گئی ہیں۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق یہ دھماکا گرین ویلج میں ہوا ہے اور یہ بین الاقوامی تنظیموں کے عملہ کے زیر استعمال ایک بڑا کمپاؤنڈ ہے۔

افغان میڈیا کے مطابق ابتک 10 افراد شہید اور 105 سے زائد افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ زخمیوں میں بچے بھی شامل ہیں۔

دھماکے کی ذمہ داری افغان طالبان نے قبول کرلی۔ ترجمان افغان طالبان کے مطابق دھماکا خودکش تھا۔

یہ دھماکا ایسے وقت میں ہوا ہے جب امریکا کے ایک سینیر سفارت کار زلمے خلیل زاد کابل کے دورے پر تھے۔ وہ افغان صدر اشرف غنی کو طالبان سے مذاکرات میں طے پانے والے مجوزہ امن معاہدے کا مسودہ دکھانے کے لیے آئے تھے۔

اس معاہدے کو اگر حتمی شکل دے دی جاتی ہے تو اس کے تحت افغانستان میں موجود ہزاروں امریکی فوجیوں کا انخلا ہوجائے گا۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں