افغانستان: طالبان کا کابل میں خودکش کار بم دھماکا، 17 افراد شہید، 119 زخمی

کابل (ڈیلی اردو) افغانستان کے دارالحکومت میں خودکش کار بم دھماکے میں 17 سے زائد شہری شہید اور 119 سے زائد زخمی ہوگئے۔

افغان میڈیا کے مطابق وزارت داخلہ کے حکام نے بتایا کہ گزشتہ رات کابل کے رہائشی علاقے گرین ولیج کے قریب خودکش کار بم دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں قریب موجود فیول اسٹیشن میں بھی آگ بھڑک اٹھی۔

دھماکے کے فوراً بعد ایک اور دھماکے کی آواز بھی سنی گئی جو پیٹرول پمپ پر مسلح افراد کی فائرنگ کے نتیجے میں ہوا تھا۔

افغان وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت رحیمی کے مطابق اس حملے میں 5 دہشت گرد شامل تھے جنہیں اسپیشل فورسز نے ہلاک کردیا۔

عینی شاہدین کے مطابق دھماکا اتنا زور دار تھا کہ علاقے میں کچھ دیر کے لیے اندھیرا چھا گیا تھا۔

افغان میڈیا کے مطابق دھماکا اس وقت ہوا جب افغانستان کے مرکزی ٹی وی اسٹیشن ٹولو نیوز پر امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد کا انٹرویو نشر ہو رہا تھا جس میں وہ طالبان کے ساتھ معاہدے کی تصدیق کررہے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق کابل میں طالبان کے ایک خودکش بم حملے کے بعد مشتعل شہریوں نے سخت سکیورٹی میں واقع اس بین لاقوامی کمپاؤنڈ (گرین ویلیج) پر حملہ کر دیا، جہاں غیرملکی مقیم تھے۔ تقریبا 400 غیر ملکیوں کو ہنگامی حالات میں وہاں سے نکلنا پڑا۔

اسی علاقے میں رواں سال جنوری میں ٹرک کے ذریعے خودکش بم دھماکہ کیا گیا تھا جس میں 100 سے زائد افراد شہید ہوئے تھے۔

دوسری جانب افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے خودکش حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ خودکش حملہ آور اور مسلح افراد آپس میں مسلسل رابطے میں تھے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ان کا ٹارگٹ غیر ملکی قابض فورسز تھیں۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں