بھارتی ریاست ہریانہ میں مسجد کے امام اور انکی اہلیہ کا بہیمانہ قتل

نئی دہلی + ہریانہ (ڈیلی اردو/نیوز ایجنسی) بھارتی ریاست ہریانہ میں ضلع سونی پت کے مانك ماجرا گاؤں کی مسجد میں مسجد کے پیش امام اور ان کی اہلیہ کے بہیمانہ قتل سے علاقہ میں سنسنی پھیل گئی ہے۔

بھارتی نیوز ایجنسی یو این آئی کے مطابق مسجد کے امام عرفان اور ان کی اہلیہ ياسمين کی لاش مسجد میں ملی۔ جب گاؤں والوں نے دونوں کی لاشوں کو مسجد میں لہولہان حالت میں دیکھا۔ گاؤں والوں نے اس کی اطلاع فوری طور پر پولیس کو دی۔ پولیس نے موقع پر پہنچ کر شواہد اکٹھے کرنے شروع کر دیئے ہیں اور دونوں کی لاش کو قبضہ میں لے کر سونی پت کے جنرل ہسپتال میں پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق مانك ماجرا مسجد گاؤں میں عرفان نام کے شخص اور ان کی اہلیہ ياسمين کی لاشوں کو گاؤں والوں نے لہولہان حالت دیکھا۔ عرفان مسجد میں امامت کرتا تھا اور ان کی اہلیہ ياسمين بھی ان کے ساتھ مسجد میں بنے ایک کمرے رہتی تھی، دونوں کا قتل انتہائی بہیمانہ انداز میں کیا گیا تھا، دونوں کے جسم پر تیز دھار ہتھیار کے کم از کم 15 سے 20 نشانات تھے۔

گاؤں کےنصیب نامی شخص نے بتایا کہ جب وہ مسجد میں آیا تو اس نے عرفان کو آواز لگائی لیکن وہ نہیں آیا تو اس نے اس کے کمرے میں جا کر دیکھا تو عرفان اور ان کی اہلیہ کی لاش کمرے میں پڑی تھیں۔ پولیس اور ایف ایس ایل کی ٹیم واردات کی اطلاع ملنے کے بعد موقع پر پہنچی۔ ایف ایس ایل کی ٹیم نے موقع سے ثبوت جمع کئےاور پولیس نے گاؤں والوں کے بیان درج کئے تاکہ قتل کا معاملہ جلد سے جلد حل ہو سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں