دنیا کیلئے سب سے بڑا خطرہ ایران ہے: امریکی صدر ٹرمپ کا جنرل اسمبلی میں خطاب

نیویارک (ڈیلی اردو/نیوز ایجنسی) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ دنیا کے امن کے لئے سب سے بڑا خطرہ ایران ہے۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا. انھوں نے کہا کہ ایران نہ صرف دہشت گردوں کا سب سے بڑا اسپانسر ہے، بلکہ شام اور یمن میں بھی دہشت گردی کا ذمہ دار ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ امریکا نے ایران کو ایٹمی ہتھیاروں کے حصول سےروکنے کے لئے معاہدہ توڑا۔

سعودی عرب پر حملے کے بعد ہم نے ایران پر بڑی پابندیاں لگائیں، رویہ بہتر بنانے تک ایران پر ایسی ہی پابندیاں لگتی رہیں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم بین الاقوامی تجارت کو ریفارم کرنا چاہتے ہیں، امریکا اس  معاشی عدم توازن سے نمٹنے کا فیصلہ کرچکا ہے، ماضی میں‌ عالم گیریت کے نام  پر چھوٹی قوموں کو نشانہ بنایاگیا۔

امریکا، کینیڈ اور میکسیکوکے درمیاں ناپٹا کو نئے معاہدے سے تبدیل کیا جارہا ہے، برطانیہ کے یورپی یونین سے نکلنے کے ساتھ ہم برطانیہ سے معاہدے کریں گے۔

انھوں نے کہا کہ دو دہائیوں پہلے چین کو ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن میں شامل کیا گیا تھا، امید تھی کہ چین اپنے تجارتی اصولوں، انسانی حقوق میں بہتری لائے گا، لیکن یہ اندازہ غلط ثابت ہوا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا مزید کہنا تھا کہ 2001 میں چین کوعالمی تجارتی تنظیم میں شامل کیا گیا، بیجنگ کے ڈبلیو ٹی او میں شامل ہونے سے امریکا میں متعدد فیکٹریاں بند ہو گئیں۔ چینی مصنوعات پر 5 کھرب ڈالر (500 ارب ڈالر) کے تجارتی ٹیرف عائد کر دیئے ہیں۔

امریکی صدر کا مزید کہنا تھا کہ مستقبل محب وطن ہونے میں ہے، بہتر شخص اپنی عوام کا سوچتا ہے، اس کے لیے سب کچھ اس کا اپنا ملک ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مستقبل میں کسی تنازعہ میں نہیں الجھنا چاہتے لیکن اپنے مفادات کا ضرور تحفظ کریں گے، ہم امن چاہتے ہیں، میں امریکی مفادات کو تحفظ کرنے میں دیر نہیں لگاؤں گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں