قندیل بلوچ قتل کیس: مرکزی ملزم کو عمر قید کی سزا، مفتی عبدالقوی بری

ملتان (ڈیلی اردو) عدالت نے معروف ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس کا محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے مقدمے میں نامزد مفتی عبدالقوی کو بری جبکہ قندیل بلوچ کے بھائی وسیم کو عمر قید کی سزا سنا دی۔

آج ملتان کی ماڈل کورٹ میں قندیل بلوچ قتل کیس سماعت جج عمران شفی کی سربراہی میں ہوئی جس میں تمام نامزد ملزمان کو عدالت میں پیش کیا گیا۔ عدالت نے کیس کے مرزی ملزم وسیم کو عمر قید کی سزا سناتے ہوئے دیگر ملزمان کو بری کردیا۔

واضح رہے کہ ماڈل کو 15 جولائی 2016 کو مظفر گڑھ میں ان کے بھائی وسیم نے غیرت کے نام پر قتل کر دیا تھا۔ اس کیس کی کُل 152 سماعتیں ہوئیں۔ یہ بھی واضح رہے کہ گزشتہ روز ماڈل کورٹ نے مقدمہ میں نامزد ملزمان کے وکلا اور پراسیکوشن کے دلائل مکمل ہونے کے بعد کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔

قندیل بلوچ کے بھائی وسیم نے اسپیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں اعتراف جرم کیا تھا، بعدازیں مقتولہ کے والدین نے بیٹے کو معاف کرتے ہوئے ملزم وسیم کی رہائی کے لیے درخواست دائر کی تھی جسے عدالت نے مسترد کردیا تھا۔

کیس میں بری ہونے والے ملزمان میں مفتی عبدالقوی سمیت اسلم شاہین، عارف، ظفر، حق نواز اور عبدالباسط شامل ہیں۔ عدالت نے مفتی عبدالقوی سمیت دیگر ملزمان کو شک کی بنیاد پر بری کردیا ہے۔

مفتی عبدالقوی کا کہنا ہے کہ کیس میں ہمارے خلاف کوئی شہادت نہیں ملی اس لیے عدالت نے بری کردیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں