اسرائیلی ریاستی دہشت گردی: 2019ء میں 33 بچوں سمیت 149 فلسطینی شہید

غزہ (ڈیلی اردو) فلسطین میں شہداء و اسیران سوسائٹی کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سال 2019ء کے دوران اسرائیلی فوج کی فلسطینیوں کے خلاف ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں 149 فلسطینی شہید ہوئے۔ شہداء میں 74 فیصد غزہ کی پٹی سے تعلق رکھتے ہیں۔

فلسطینی سماجی کارکن محمد صبیحات نے بتایا کہ گذشتہ برس اسرائیلی ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں شہید ہونے والوں میں 33 بچے ہیں جو کل شہداء کا 23 فیصد ہیں جب کہ 2018ء کی نسبت شہید ہونے والے بچوں کی تعداد میں 5 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ گذشتہ پانچ سال کےدوران ہر سال اوسطا 161 فلسطینی شہید کیے گئے۔

مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق گذشتہ برس اسرائیلی فوج کی ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں 149 فلسیطنی شہید ہوئے۔ شہداء میں 112 کا تعلق غزہ کی پٹی سے ہے۔

69 فیصد فلسطینی اسرائیلی ریاست کی وحشیانہ بمباری میں شہید ہوئے۔

غرب اردن میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 37 تھی جو کہ کل شہداء کا 26 فی صد ہیں۔ شہدا میں 33 بچے، 12 خواتین اور 137 مرد تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں