2,014

ایران نے امریکی صدر ٹرمپ کے سر کی قیمت 80 ملین ڈالر مقرر کر دی

تہران (ڈیلی اردو) ایران کی سپاہِ پاسداران انقلاب کی القدس فورس کے مقتول سربراہ میجر جنرل قاسم سلیمانی کی شمال مشرقی شہر مشہد میں اتوار کو نمازِ جنازہ ادا کی گئی ہے، ان کی نماز جنازہ میں ہزاروں افراد نے شرکت کی ہے۔

مقتول قاسم سلیمانی کی نمازجنازہ کی امامت کرنے والے عالم نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سر کی قیمت آٹھ کروڑ ڈالر مقرر کرنے کا اعلان کیا ہے۔

امام نے مشہد میں جنازے کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم آٹھ کروڑ ایرانی ہیں۔اگر ہم میں سے ہر کوئی ایک ایک ڈالر پس انداز کردے تو ہم آٹھ کروڑ ڈالر جمع کرلیں گے اور جو کوئی بھی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا سر لائے گا ،اس کو ہم یہ رقم انعام میں دیں گے۔‘‘

قاسم سلیمانی کے جنازے کا احوال ایران کے چینل ون پر براہ راست نشر کیا گیا ہے۔ اس سے پہلے ان کی میت ایک خصوصی طیارے کے ذریعے عراق سے ایران منتقل کی گئی تھی۔

ایران کی سپاہِ پاسداران انقلاب کی بیرون ملک فوجی کارروائیوں کی ذمے دار القدس فورس کے کمانڈر میجر جنرل قاسم سلیمانی اور عراق کی شیعہ ملیشیاؤں پر مشتمل الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر ابو مہدی المہندس سمیت متعدد جنگجو گذشتہ جمعہ کو بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے نزدیک امریکا کے ایک ڈرون حملے میں شہید ہو گئے تھے۔

ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای، صدر حسن روحانی اور سپاہِ پاسداران انقلاب کے متعدد سینیر کمانڈروں نے امریکا سے قاسم سلیمانی کی موت کا انتقام لینے کا اعلان کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں