308

خیبر پختونخوا: نوشہرہ میں آٹھ سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل، دو ملزم گرفتار

نوشہرہ (ڈیلی اردو) خیبر پختونخوا کے ضلع نوشہرہ میں آٹھ سالہ بچی عوض نور کو مبینہ زیادتی کے بعد قتل کر دیا گیا، بچی کی نعش گھر کے قریب ایک باغیچے سے برآمد ہوئی ہے۔

پولیس کے مطابق کاکا صاحب کے علاقے پیر سچ سے 8 سالہ بچی عوض نور کی باغیچے سے نعش برآمد ہوئی ہے جسے ڈسٹرکٹ ہسپتال نوشہرہ منتقل کیا گیا، اور خدشہ ہے کہ بچی کو جنسی زیادتی کے بعد قتل کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق بچی کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے ڈسٹرکٹ ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ ورثاء کے مطابق 8 سالہ نور کل تین بجے گھر سے قرآن پاک کی سبق کے لئے نکلی تھی اور پھر گھر واپس نہ آئی جس کے بعد اس کی تلاش شروع کردی گئی۔ رات کے وقت بچی کی لاش  گھر کے قریب ایک باغیچے سے ملی۔

پولیس کے پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد ہی اصل حقائق پتہ لگے گا، تھانہ نوشہرہ کلاں پولیس نے ایف آئی آر درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے۔

دوسری جانب تھانہ نوشہرہ کلاں نے فوری کارروائی کرتے ہوئے دونوں نامزد ملزمان ابرار اور رفیق کو گرفتار بھی کرلیا ہے جن سے اس ضمن میں تفتیش جاری ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں