افغانستان: تخار میں طالبان کے حملے میں ضلعی پولیس سربراہ سمیت 4 افسران ہلاک

کابل (بیورو رپورٹ) افغانستان کے شمالی صوبہ تخار میں ہفتہ کی رات کو طالبان کے ساتھ جھڑپوں کے دوران 4 افغان پولیس اہلکار اور7 طالبان دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں۔

طالبان دہشت گردوں کی جانب سے مضافاتی ضلع نمک آب پر دھاوہ بولنے کے بعد شدید جھڑپیں شروع ہوئیں۔

مقامی حکومت کے ترجمان حامد مبریز نے اتوار کے روز ڈیلی اردو کو بتایا کہ دہشت گردوں کو پیش قدمی سے روکنے کی کوشش میں ضلعی پولیس سربراہ عبدالظاہر اور 3 پولیس افسران ہلاک ہوگئے۔

انہوں نے کہا کہ 2 پولیس اہلکار اور 3 طالبان ہوئے، انہوں نے مزید کہا کہ طالبان نمک آب پر چڑھ دوڑے اور باقی سکیورٹی فورسز قریبی ضلع کی جانب پسپا ہوگئیں۔

علاوہ ازیں ضلعی سربراہ نازکمیر امیری نے دن کے اوائل میں نمائندہ ڈیلی اردو کو بتایا کہ ہمسایہ صوبہ قندوز میں ہفتہ کی رات کو سکیورٹی فورسز اور طالبان کے درمیان جھڑپوں کے دوران طالبان کا ایک مارٹر گولہ ضلع امام صاحب پر گرنے کے باعث ایک بچے سمیت 3 شہری ہلاک جبکہ 4 شہری زخمی ہوگئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں