امریکا کا مشرقی وسطیٰ میں افواج اور میزائلوں کی تعداد میں کمی کا فیصلہ

واشنگٹن (ڈیلی اردو) افغانستان سے فوج نکالنے کے بعد امریکا نے مشرقِ وسطیٰ میں بھی افواج کم کرنے سمیت میزائلوں میں بھی کمی کا فیصلہ کیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا نے ایران سے کشیدگی میں کمی کے بعد مشرق وسطیٰ میں تعینات افواج میں بھی کمی کا فیصلہ کیا ہے، اس کے علاوہ مشرق وسطیٰ کے ممالک میں نصب میزائلز کی تعداد میں بھی کمی کا سلسلہ جاری ہے۔

وال اسٹریٹ جنرل کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پینٹاگون سعودی عرب، کویت، اردن اور ایران میں نصب پیٹریاٹ میزائل بیٹریوں سمیت دفاعی نظام بھی ہٹا رہا ہے جو کہ سابقہ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے نصب کیے گئے تھے جب کہ خود پینٹاگون نے فوجیوں کی تعداد میں کمی کی تصدیق کی ہے۔

دوسری جانب امریکی محکمہ دفاع کے سینیئر حکام کا کہنا ہے دوست خلیجی ممالک میں اب بھی ہماری ملٹری بیس ہیں، انہیں مکمل طور پر بند نہیں کیا جارہا ہے، اس خطے میں اب بھی ایک بڑی تعداد امریکی افواج کی موجود ہے۔

واضح رہے کہ افغان طالبان سے امن معاہدہ طے پانے کے بعد امریکا نے افغانستان سے بھی اپنی افواج نکالنے کا اعلان کیا تھا، پینٹاگون کے مطابق امریکی افواج کا انخلا رواں سال ستمبر تک مکمل ہوجائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں