ایبٹ آباد میں خواجہ سرا کے خلاف توہین مذہب کا مقدمہ درج

ایبٹ آباد (نمائندہ ڈیلی اردو) صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع ایبٹ آباد میں ایک خواجہ سرا کے خلاف پولیس نے توہین مذہب کا مقدمہ درج کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق ایبٹ آباد کے علاقے کینٹ میں ایک خواجہ سرا کے خلاف توہین مذہب کا مقدمہ درج کر کے گرفتار کرلیا گیا ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مشتعل افراد ایک خواجہ سر کو تھپڑ، مکے اور ڈنڈوں سے مار رہے ہیں۔ جس میں مبینہ ملزم کا سر پھٹ گیا اور وہ لہولہان ہوگیا۔

پولیس کے مطابق اطلاع ملتے ہی اہلکار ڈسٹرکٹ کونسل ہال روڈ نزد عیدگاہ میں پہنچ گئے اور زخمی خواجہ سرا کو اُس کی حفاظت کے لیے تھانے میں منتقل کر دیا گیا ہے۔

ایس ایچ او کینٹ نعمان جاوید نے کہا کہ ملزم کے خلاف پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 295-سی کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے ان سے تفتیش بھی کی جارہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں