جرمنی میں روس کیلئے جاسوسی کرنے والا برطانوی شہری گرفتار

برلن (ڈیلی اردو/اے پی/ڈوئچے ویلے/روئٹرز) جرمنی میں ایک برطانوی شہری کو روس کے لیے جاسوسی کے الزام میں حراست میں لے لیا گیا ہے۔ زیرحراست ملزم برلن میں برطانوی سفارت خانے سے بھی منسلک رہا۔

جرمنی کے وفاقی دفتر استغاثہ نے بتایا کہ برطانوی شہری ڈیوڈ ایس کو پوٹسڈام شہر سے منگل کے روز گرفتار کیا گیا۔ جرمنی میں نجی کوائف کے قوانین کے تحت اس ملزم کا پورا نام ظاہر نہیں کیا گیا ہے۔

پراسیکیوٹرز کے مطابق ملزم روسی خفیہ ادارے کے لیے جاسوسی کی سرگرمیوں میں ملوث رہا۔ اس گرفتاری کے لیے جرمن اور برطانوی حکام نے تفتیش میں ایک دوسرے کی معاونت کی۔ 

بتایا گیا ہے کہ ملزم کم از کم نومبر سے روسی خفیہ ادارے کے لیے کام میں مصروف تھا۔ یہ بھی کہا گیا ہے کہ ملزم نے دارالحکومت برلن میں قائم برطانوی سفارت خانے میں بھی کام کیا جب کہ اس نے اس دوران روسیوں کو کچھ دستاویزات فراہم کیں۔

جرمن وزارت خارجہ کے ترجمان کرسٹوفر برگر نے کہا ہے کہ جرمن حکومت اس معاملے پر گہری نگاہ رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا، ”ہم زیرحراست ملزم کے روسی خفیہ ادارے کے لیے کام کرنے کی خبروں کو نہایت سنجیدگی سے لے رہے ہیں۔ جرمن سرزمین پر جرمنی کے قریبی اتحادیوں کی جاسوسی کو کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا۔‘‘

خبررساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق روسی حکام کی جانب سے فی الحال اس معاملے پر کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے، تاہم برطانوی حکومت نے اس سلسلے میں کچھ تفصیلات بتاتے ہوئے کہا، ”ایک فرد جو حکومت کے لیے کانٹریکٹ پر کام کرنے کے لیے رکھا گیا تھا، اسے جرمن حکام نے گرفتار کیا ہے۔‘‘

برطانوی بیان میں مزید کہا گیا، ”چوں کہ یہ معاملہ زیرتفتیش ہے اس لیے اس پر مزید کوئی تبصرہ مناسب نہیں ہو گا۔‘‘

برطانوی میٹروپولیٹین پولیس کی جانب سے ایک علیحدہ بیان میں کہا گیا ہے کہ برلن کے علاقے میں ایک شخص کو جاسوسی سے متعلق سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے شبے میں گرفتار کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں