گوادر خودکش حملہ: کیچ سے خودکش حملہ آور سمیت 3 دہشت گرد گرفتار

اسلام آباد (ش ح ط) کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ ( سی ٹی ڈی ) نے خفیہ اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے کالعدم تنظیم بلوچ لبریشن آرمی کے ایک خودکش بمبار سمیت تین دہشت گردوں کو گرفتار کر کے بارودی مواد اور اسلحہ بم برآمد کرلیا۔

سی ٹی ڈی ترجمان کے ‏مطابق بلوچستان کے ضلع کیچ کے علاقے تربت میں ایک خودکش حملہ آور سمیت تین دہشت گردوں کو گرفتار کرلیا۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ بلوچ لبریشن آرمی کے ایک رکن شعیب احمد کو تین روز قبل خفیہ اطلاع پر ضلع کیچ سے گرفتار کرلیا تھا جس کی نشاندہی پر مزید دو ملزمان کو گرفتار کرکے ایک عدد دستی بم، دو عدد ڈیٹونیٹرز، پرائما کارڈ اور بارودی مواد برآمد کیا گیا۔

ترجمان کے مطابق تفتیش کے دوران مبینہ دہشت گردوں نے گوادر خودکش دھماکے کے سہولت کار نیٹ ورک کا حصہ ہونے کا اعتراف کیا۔

ملزم عارف نے انکشاف کیا کہ اس کے بھائی احمد نے خودکش بمبار کو ایران کے علاقے رامین سے منتقل کیا۔ اسے 10 اور 11 اگست کی رات کو خودکش بمبار موصول ہوا جسے اس نے کسٹم گودام کے قریب رہنے کے لیے جگہ فراہم کی۔

سی ٹی ڈی ترجمان کے مطابق گرفتار ملزم نے یہ بھی انکشاف کیا کہ ایران کے ساحلی شہر چاہ بہار کے علاقے شیران کا رہائشی رسول بخش اس حملے کا ماسٹر مائنڈ ہے۔

ملزم عارف نے مزید بتایا کہ رسول بخش نے ہی ان چار دہشت گردوں کی نقل و حمل میں ان کے مرحوم والد کو بھی استعمال کیا تھا جنہوں نے 2019 میں پی سی ہوٹل گوادر پر حملہ کیا تھا۔

سی ٹی ڈی ترجمان کے مطابق خودکش بمبار ایک اور گرفتار ملزم عادل کے ہمراہ دھماکے سے پہلے عارف کے گھر ٹھہرا اور ریکی کی۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ نیٹ ورک کے بقیہ ارکان کو گرفتار کرنے کیلئے کوششیں جاری ہیں۔

سی ٹی ڈی کے مطابق گرفتار تمام ملزمان گوادر میں چینی انجینئرز کے قافلے پر خودکش حملے میں ملوث تھے۔

سی ٹی ڈی نے کہا کہ دہشت گردوں کے قبضے سے بارودی مواد، سیفٹی فیوز اور اسلحہ برآمد کرلیا، دہشت گردوں کو مزید تحقیقات کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ راوں سال 20 اگست کو بلوچستان کے ساحلی شہر گوادر میں ایک خود کش حملے میں کم از کم دو بچے ہلاک اور دو زخمی ہوئے تھے۔ اس دھماکے میں چینی انجینیئروں اور کارکنوں کے قافلے کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں