ابوظہبی ائیر پورٹ حملہ: یو اے ای نے سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس کا مطالبہ کردیا

ابوظہبی (ڈیلی اردو) متحدہ عرب امارات کی حکومت نے حوثی باغیوں کے حملے کے بعد اقوام متحدہ سے سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس بلانے کی درخواست کر دی ہے۔

یو اے ای کے سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے کے لیے ناروے کو خط لکھ دیا گیا ہے جس کے پاس جنوری کے لیے سلامتی کونسل کی سربراہی ہے۔

دوسری جانب سعودی عرب کے بادشاہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیر صدارت کابینہ کا ورچوئل اجلاس ہوا جس میں عرب امارات نے ابوظبی میں حوثیوں کی جانب سے ہونے والے حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی۔

شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیر صدارت ہونے والے ورچوئل اجلاس میں خلیجی ریاستوں کے درمیان معلومات کے تبادلے اور تحفظ کے معاہدے کی منظوری پر بھی بات کی گئی۔

یاد رہے کہ دو روز قبل ابوظبی میں حوثی باغیوں کے مبینہ ڈرون حملوں میں 3 افراد ہلاک اور 6 زخمی ہوئے تھے۔

حوثی ملیشیا کے ترجمان نے اس حوالے سے دعویٰ کیا تھا امارات کے خلاف آپریشن شروع کر دیا ہے اور جلد حملوں کے حوالے سے مزید معلومات فراہم کی جائیں گی۔

دوسری جانب اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے بھی ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید النہیان کو خط لکھا جس میں سکیورٹی اور انٹیلی جنس شعبے میں معاونت کی پیشکش کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں