190

عدلیہ مخالف انٹرویو کیس: سابق سینیٹر فیصل رضا عابدی باعزت بری

اسلام آباد (ڈیلی اردو) انسداد دہشت گردی عدالت نے سابق سینیٹر فیصل رضا عابدی کو باعزت بری کردیا۔

اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں سابق سینیٹر فیصل رضا عابدی کیخلاف سماعت ہوئی جہاں عدالت نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے فیصل رضا عابدی کو باعزت بری کردیا۔ عدالت نے ویب ٹی وی مالکان ہنس مسرور اور احسن سلیم کو بھی بری کر دیا۔

بریت کے فیصلے کے بعد میڈیا سے گفتگو میں ایک بار پھر سید فیصل رضا عابدی نے سابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار پر تنقید کی۔ انہوں نے کہاکہ اپنے لہجے پر سپریم کورٹ سے معافی مانگی تھی تاہم کسی بھی معاشرے کی تشکیل کیلئے عدالت کا کرداربہت اہم ہوتا ہے۔

واضح رہے کہ ستمبر 2018 میں سپریم کورٹ نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کے خلاف نازیبا الفاظ بولنے کے معاملے پر پیپلز پارٹی کے سابق سینیٹر فیصل رضا عابدی کے بیان پر ازخود نوٹس لیتے ہوئے کیس دوسرے بینچ منتقل کردیا تھا۔

جہاں پولیس کی جانب سے فیصل رضاعابدی کیخلاف انسداد دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ بعد ازاں 10 اکتوبر کو پولیس نے سپریم کورٹ کے باہر سے پیپلز پارٹی کے سابق رہنما فیصل رضا عابدی کو گرفتار کیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں