کانگو میں سیکیورٹی فورسز کا جنگجوؤں کے ٹھکانوں پر حملہ، 22 ہلاک

کنساشا (ویب ڈیسک) کانگو میں سرکاری فوج اور مقامی مسلح تنظیم کے درمیان جھڑپ میں 20 جنگجو اور 2 فوجی اہلکار ہلاک ہوگئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق افريقی ملک کانگو کے علاقے بینی ميں سرکاری فوجیوں نے علاقے کا قبضہ واگزار کرانے کے لیے مقامی مسلح تنظیم مائی مائی کے جنگجوؤں کے ٹھکانوں پر حملہ کیا۔ جھڑپ کے دوران 20 جنگجو مارے گئے جب کہ 2 فوجی اہلکار بھی ہلاک ہوئے۔

معدنيات سے مالا مال کانگو کے اس علاقے ميں مائی مائی جيسی کئی جنگجو تنظیمیں قبضے کے لیے جنگ میں مصروف ہیں۔ یہ تنظیمیں معدنی وسائل پر قبضے کے لیے مقامی باغی گروپوں سے بھی لڑائیاں کرتی ہیں جس کے باعث یہاں امن و امان کی حالت نہایت مخدوش ہے۔

دوسری جانب کمزور سیاسی حکمت عملی اور شخصیت پسندی پر منحصر کرتی جمہوریت ان تنظیموں اور باغی گروپوں کے خلاف موثر کارروائی میں ناکام نظر آتی ہیں چنانچہ غیر ملکی فوجیوں کی مدد حاصل کرنی پڑتی ہے۔

واضح رہے کہ کانگو میں کئی بار ملتوی ہونے والے صدارتی الیکشن بالآخر 2018ء کے آخری ماہ میں ہوگئے تاہم 2 ماہ بعد نتائج کا اعلان تو کردیا گیا لیکن حکومت سازی سے متعلق کوئی ٹھوس قدم نہیں اُٹھایا جا سکا ہے۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں