164

افغان سیکیورٹی فورسز کا طالبان کیخلاف زمینی و فضائی حملے، 48 ہلاک

کابل(ڈیلی اردو) افغانستان کے صوبے ہلمند، غزنی اور قندھار میں افغان سیکیورٹی فورسز کی فضائی اور زمینی حملوں کے نتیجے میں 48 طالبان جنگجوؤں ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق افغانستان کے صوبے قندھار کے علاقے شاہ ولی کوٹ میں سیکیورٹی فورسز نے دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر فضائی حملہ کردیا۔

افغان وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز کی فضائی کارروائی نتیجے میں 36 دہشت گرد ہلاک ہوگئے۔ مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ افغانستان فورسز نے گزشتہ روز صوبے ہلمند کے مغربے حصّے میں دہشت گردوں کے خلاف فضائی کارروائی کے دوران طالبان انٹیلی جنس چیف کو دو ساتھیوں کے ہمراہ ہلاک کیا تھا۔

صوبے غزنی اور ہلمند میں زمینی اور فضائی حملوں میں 12 طالبان مارے گئے جبکہ متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔ فضائی حملوں میں اسلحہ ڈپو اور گاڑیوں کو بھی تباہ کیا گیا

افغان فورسز کا کہنا تھا کہ طالبان کمانڈر ملّا احمد صوبے میں ہونے والے دہشت گردانہ حملوں اور ان کی منصوبہ بندی کا ذمہ دار تھا۔مقامی میڈیا کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے طالبان کمانڈر کی گاڑی کو نشانہ بنایا تھا جس نتیجے میں کمانڈر سمیت دو ساتھی بھی ہلاک ہوئے تھے۔

افغان میڈیا رپورٹس کے مطابق فروری میں اب تک سکیورٹی فورسز کی کارروائیوں کے دوران 19 طالبان دہشت گرد صوبہ ہلمند میں ہلاک ہوچکے ہیں تاہم طالبان کی جانب سے ہلاکتوں ککی تصدیق نہیں کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس دسمبر میں اتحادی افواج کی جانب سے افغانستان کے مشرقی صوبے ننگرہار میں فضائی حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں عالمی دہشت گرد تنظیم داعش کا ترجمان صل عزیز اعظم ہلاک ہوا تھا۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ عزیز اعظم عراق اور شام میں بحیثیت داعش کا ترجمان کام کرتا تھا، اس دہشت گرد گروہ میں اسے مرکزی رہنماؤں کی حیثیت بھی حاصل تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں