221

سوڈان میں 28 فوجی افسران کی اجتماعی قبر کا انکشاف

خرطوم (ڈیلی اردو) سوڈان میں حکام نے اعلان کیا ہے کہ دارالحکومت خرطوم کے نزدیک واقع شہر ام درمان میں ایک اجتماعی قبر کا انکشاف ہوا ہے۔ جو غالبا ان 28 افسران کی ہے جنہیں 1990ء میں اس وقت کے صدر عمر البشیر کے خلاف انقلاب کی ناکام کوشش کے الزام میں موت کے گھاٹ اتارا گیا تھا۔

سوڈان میں استغاثہ کی جانب سے گذشتہ رات رات تاخیر سے جاری اعلان میں کہا گیا ہے کہ معلومات سے واضح ہوتا ہے کہ غالبا یہ وہ ہی اجتماعی قبر ہے جس میں قتل کیے جانے والے افسران کو وحشیانہ طریقے سے دفن کیا گیا۔

استغاثہ کے مطابق اس اجتماعی قبر کا تعین تین ہفتوں کی مسلسل کوششوں کے بعد کیا گیا۔بغاوت کا یہ واقعہ جون 1989ء میں عمر البشیر کی جانب سے اقتدار پر قبضے کے چند ماہ بعد سامنے آیا۔ سوڈانی فوج کے مختلف یونٹوں کے افسران نے مشترکہ طور پر البشیر کا تختہ الٹنے کی کوشش کی۔ تاہم دارالحکومت میں بعض عسکری یونٹوں پر کنٹرول حاصل کرنے کے چند گھنٹوں بعد انقلاب کی یہ کوشش ناکام ہو گئی۔ ان تمام افسران کو عدالتی کارروائی کے لیے پیش کیا گیا۔

عدالت نے ان میں سے 28 کو سزائے موت دی اور بقیہ کو مختلف مدت کی قید کی سزا سنائی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں