بھارتی جاسوس کلبھوشن جادیو کیس کی سماعت کل ہیگ میں ہوگی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان میں دہشت گردی کے منصوبہ ساز بھارتی جاسوس کلبھوشن جادیو کے کیس کی سماعت کل سے عالمی عدالت انصاف میں کل دوبارہ شروع ہوگی جو چار دن جاری رہے گی۔

پاکستان کا موقف ہے کہ ویانا کنونشن کے تحت جنگی قیدی کے حقوق کلبھوشن جادیو کو حاصل نہیں ہے، کیس کا فیصلہ گرمیوں کی چھٹیوں سے پہلے آنے کا امکان ہے۔

بھارتی نیوی کے حاضر سروس کمانڈر اور راکے ایجنٹ کلبھوشن جادیو نےپاکستان میں ہونے والی دہشتگردی کے کئی منصوبے بنائے جس پر کلبھوشن جادیو کو باقاعدہ کیس چلا کر فوجی عدالت سے سزائے موت کی سزا سنائی جا چکی ہے۔

کلبھو شن جادیوکی سزائے موت کو بھارت نے عالمی عدالت انصاف میں چیلنج کیا ہوا ہے، بھارت نے کلبھوشن جادیو کو ویانا کنونشن کے آرٹیکل 36 کے تحت جنگی قیدی کے حقوق دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

پاکستان نے موقف اختیار کیا ہے کہ ویانا کنونشن کے تحت جنگی قیدی کےحقوق کلبھوشن جادیو کو حاصل نہیں ہیں کیونکہ 2008 میں قیدیوں کے تبادلے پر ہونے والے پاکستان اور بھارت کے درمیان معاہدے میں یہ بات شامل تھی کہ سیکورٹی خدشات کے معاملے پرکیس ٹو کیس میرٹ پرفیصلہ کیا جائےگا کہ کن لوگوں کو ویانا کنونشن کے تحت حقوق دئیےجاسکتے ہیں۔

عالمی عدالت انصاف میں کل سے شروع ہونے والی سماعت میں پہلے بھارت اپنے دلائل دے گا جس کے جواب میں 19 تاریخ کو پاکستان اپنے دلائل اور شواہد پیش کرے گا۔

پاکستان کی طرف سے کیس کا دفاع بیرسٹر خاور قریشی کررہے ہیں، کیس کی سماعت 21 فروری تک جاری رہےگی۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں