ترکی: بغاوت کے الزام میں 532 فوجی افسران اور اہلکاروں کے وارنٹ گرفتاری جاری

استنبول (ڈیلی اردو/شِنہوا) ترک استغاثہ نے 532 فوجی افسران اور اہلکاروں کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کیے ہیں جن پر 2016 میں ناکام بغاوت کی کوشش کی پشت پناہی کرنیوالے نیٹ ورک سے روابط رکھنے کا الزام ہے۔

ترک کی سرکاری خبر رساں ایجنسی انادولو نے پیر کے روز بتایا کہ استنبول اور ازمیر میں پراسکیوٹرز کے تعاون سے کی جانیوالی تحقیقات کے دوران پولیس کے دستوں نے 62 صوبوں میں کارروائیوں کا آغاز کر دیا ہے۔

انادولو کے مطابق استغاثہ نے یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ مشتبہ افراد امریکہ میں مقیم ترک عالم دین فتح اللہ گولن کی سربراہی میں چلنے والے نیٹ ورک سے رابطے رکھتے ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق کارروائیوں میں نشانہ بنائے جانیوالے افراد میں 459 حاضر سروس فوجی اور فوجی سکول کے برخاست شدہ طلباء شامل ہیں۔

ترک حکومت کی جانب سے گولن اور اس کے نیٹ ورک پر جولائی 2016 میں ہونیوالی بغاوت کے ماسٹر مائنڈ ہونے کا الزام عائد کیا جاتا ہے جس میں 250 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں