270

ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ قومی اسمبلی کے اندر نماز کی ادائیگی

اسلام آباد (ڈیلی اردو) اپوزیشن نے قومی اسمبلی میں احتجاج کرتے ہوئے اسپیکر ڈائس کے آگے نماز کی ادائیگی شروع کردی۔

اسپیکر اسد قیصر کی سربراہی میں قومی اسمبلی کا اجلاس جاری تھا کہ جمیعت علمائے اسلام (ف) کے رہنما مولانا اسعد محمود نے قرارداد پیش کرنے کی اجازت مانگی، انہوں نے کہا کہ کل سے قرار داد لانے کی کوشش کر رہا ہوں لیکن پیش نہیں کرنے دے رہے۔ جس پر اسپیکر نے ریمارکس دیئے کہ اس طرح قراداد پیش نہیں کر سکتے پہلے سیکریٹریٹ میں قرارداد جمع کرائیں۔

قرارداد پیش کرنے کی اجازت نہ ملنے پر ایوان میں ہنگامہ آرائی شروع ہوئی اور مولانا اسعد محمود نے ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ اسپیکر کے ڈائس کے آگے ہی نماز کی ادائیگی کردی۔

بعد ازاں مسلم لیگ (ن) کے علاوہ دیگر نے ابھی ن کی امامت میں نماز ادا کرنی شروع کردی، جس پر اسپیکر نے اجلاس کچھ دیر کے لیے ملتوی کردیا۔ اجلاس دوبارہ شروع ہوا تو وفاقی وزیر فیصل واوڈا کے خلاف نعرے بازی شروع ہوگئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں