ہندو لڑکی سے زیادتی کا ملزم ضمانت مسترد ہونے پر سپریم کورٹ سے باآسانی فرار

کراچی (ویب ڈیسک) سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے عمر کوٹ میں 12 سالہ ہندو لڑکی پر جنسی تشدد سے متعلق کیس میں ملزمان کی عبوری ضمانت کی درخواست مسترد کر دی۔

ایک ملزم ضمانت مسترد ہونے کے بعد عدالت سے فرار ہو گیا۔

دورانِ سماعت سرکاری وکیل کی جانب سے مؤقف اپنایا گیا کہ یہ افسوس ناک واقعہ 14 فروری 2019 ء کو عمر کوٹ میں رونما ہوا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ 12سال کی بچی کھیت میں مرچیں چن رہی تھی جب ملزمان سلیم، چیلو اور ہرچند نے اسے پکڑا اور ملزم سلیم نے دیگر ملزمان کی موجودگی میں 12 سالہ بچی پر جنسی تشدد کیا۔

سرکاری وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ ملزم رعایت کا مستحق نہیں، اس کی ضمانت مسترد کی جائے۔

عدالت نے تمام دلائل سننے کے بعد سندھ ہائی کورٹ کے فیصلہ کو برقرار رکھتے ہوئے ملزمان کی عبوری ضمانت مسترد کر دی۔

ضمانت مسترد ہونے پر سلیم عدالت سے فرار ہو گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں