چین نے مذہبی معاملات پر امریکی عہدیدارکے خلاف پابندیاں عائد کردیں

بیجنگ (ڈیلی اردو/شِنہوا) چین نے اپنے حکام کے خلاف امریکہ کی یکطرفہ پابندیوں کے جواب میں، بین الاقوامی مذہبی آزادیوں کے امریکی کمیشن کے کمشنر جونی مور پر پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لی جیان نے یہ اعلان بدھ کو امریکی محکمہ خارجہ کی بین الاقوامی مذہبی آزادیوں کی رپورٹ 2020 اور اس کی جانب سے پابندیوں کے اعلان پر تنقید کرتے ہوئے کیا۔

ترجمان نے کہا کہ نظریاتی تعصب سے بھرپور نام نہاد رپورٹ میں حقائق کو نظر انداز کیا گیا، چین کی مذہبی پالیسی کی کھلے عام تضحیک اور چین کے اندرونی معاملات میں سنگین مداخلت کی گئی جس کی چین سختی سے مخالفت کرتا ہے۔

ژاؤ نے کہا کہ چین نے جونی مور اور اس کے اہل خانہ پر مین لینڈ کے ساتھ ساتھ ہانگ کانگ اور مکاؤ کے خصوصی انتظامی علاقوں میں داخلے پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ امریکہ نے کھلم کھلا مذہبی تنظیموں کی حمایت کی اور جھوٹ اور غلط معلومات کی بنیاد پر چینی حکام کے خلاف یکطرفہ پابندیاں عائد کیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں