بلوچستان میں سیکیورٹی فورسز پر حملوں میں 3 اہلکار ہلاک، 4 زخمی

راولپنڈی (ڈیلی اردو) صوبہ بلوچستان میں سیکیورٹیفورسز پر حملوں میں تین اہلکار ہلاک ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ مکران کے علاقے تمپ میں دہشت گردوں کے گروپ نے سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ پر فائرنگ کی۔

انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی فورسز نے تمام تر دستیاب ہتھیاروں سے جوابی کارروائی کی جس کے نتیجے میں دہشت گردوں کو بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑا۔

تاہم سیکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے مقابلے کے دوران خاران سے تعلق رکھنے والے سپاہی نصیب اللہ اور لکی مروت کے رہائشی سپاہی انشا اللہ نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی فورسز بزدل دہشت گردوں کی کارروائیوں کو شکست دینے کےلیے پُرعزم ہیں، ان دہشت گردوں کا مقصد بلوچستان میں امن و استحکام اور صوبے کی ترقی کو نقصان پہنچانا ہے۔

دریں اثنا ضلع سبی میں بارودی سرنگ کے دھماکے سے ایک ایف سی اہلکار ہلاک اور فرنٹیئر کور (ایف سی) کے 2 اہلکاروں سمیت 4 اہلکار زخمی ہوئے۔

حکام کے مطابق سبی کے علاقے بابر کچ میں ایف سی کے تین اہلکار گشت کر رہے تھے جن میں سے ایک اہلکار نے شرپسندوں کی جانب جھاڑیوں میں بنائی گئی بارودی سرنگ پر پیر رکھا اور دھماکے کے نتیجے میں موقع پر پر ہی ہلاک ہوگئے جبکہ واقعے میں 2 اہلکار زخمی ہوئے۔

بعد ازاں سیکیورٹی فورسز نے جائے وقوع کو گھیرے میں لیتے ہوئے شہید و زخمی اہلکاروں کو سبی میں کمبائنڈ ملٹری ہسپتال (سی ایم ایچ) منتقل کردیا گیا۔

حکام کا مزید کہنا تھا کہ سبی ٹاؤن میں ہونے والے دھماکے میں 2 مزدور بھی زخمی ہوئے، مزدور تعمیراتی کام کر رہے تھے، ان میں سے ایک مزدور سمینٹ کے تھیلے منتقل کرنے گیا ان تھیلوں میں دھماکا خیز مواد موجود تھا جو زوردار آواز سے پھٹا۔

زخمی مزدوروں کی شناخت محمد افضل اور ماجد خان کے ناموں سے ہوئی جن کا تعلق پنجاب سے ہے۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں